New Fatima Blog

This website is about khwab ki tabeer by ibn e siren, Ibn e kathir, khwab nama e yousafi in urdu , Quran, Hadith, Dramas in Urdu and english, Poetry, Naat, and cooking.

a ads

Monday, September 20, 2021

Jhooti hi tasalli ho, kuch dil to behal jaye


 جھوٹی ہی تسلّی ہو ، کچھ دل تو بہل جائے
دھندلی ہی سہی لیکن، اک شمع تو جل جائے

اُس موج کی ٹکّر سے ساحل بھی لرزتا ہے
کچھ روز جو طوفاں کے آغوش میں پل جائے

اے جلوہؑ جانانہ!! پھر ایسی جھلک دکھلا
حسرت بھی رہے باقی، ارماں بھی نکل جائے

اِس واسطے چھیڑا ہے پروانوں کا افسانہ
شاید ترے کانوں تک پیغامِ عمل جائے

میخانۂ ہستی میں مے کش وہی مے کش ہے
سنبھلے تو بہک جائے، بہکے تو سنبھل جائے

ہم نے تو فناؔ اِتنا مفہومِ غزل سمجھا
خود زندگئ شاعر اشعار میں ڈھل جائے

فناؔ نظامی کانپوری


jhooti hi tasalli ho, kuch dil to behal jaye
dhundli hi sahi lekin, ik shama to jal jaye

uss mouj ki takkar se saahil bhi larazta hai
kuch roz jo tufaan ke agosh mein pal jaye

ae jalva Janana ! ! phir aisi jhalak dikhla
hasrat bhi rahay baqi, arman bhi nikal jaye

iss wastay cheda hai parwano ka afsana
shayad tre kaanon tak pegham-e amal jaye

mekhana hasti mein me kash wohi me kash hai
sanbhlay to behak jaye, behke to sambhal jaye

hum ne to FANA itna mafhuum ghazal samjha
khud zindagi shayar ashaar mein dhal jaye

Fana Nizami kanpoori

No comments:

Post a Comment