Ali Zaryoun Poetry

Kya Kya Mukhlis Dill Tha Teri Khatir Jo Thukraya Tha


                                                                           کیا کیا مخلص دل تھا تیری خاطر جو ٹھکرایا تھا

میں تو اپنے آپ کو مٹی کر کے تجھ تک آیا تھا
Kya Kya Mukhlis Dill Tha Teri Khatir Jo Thukraya Tha
Main To Apne Aap Ko Mitti Kar Kay Tujh Tak Aaya Tha !
اُس پاکیزہ شب کو میں جانوں یا میرا رب جانے
آدھی رات لڑائی کی تھی آدھی رات ہنسایا تھا
Us Pakeeza Shab Ko Main Jaanon Ya Mera Rab Jaanay
Aadhi Raat Larayi Ki Thi Aadhi Raat Hansaya Tha ..!
یار میں اس لڑکی کی عزت پر کیسے کوئی بات سنوں ؟؟
وہ تو وہ ہے مجھ سے اس کا آنچل تک شرمایا تھا !!
Yaar ! Main Us Larki Ki Izzat par Kese Koi Baat Sunon?
Wo to Hay ! Mujh Say Us Ka Aanchal Tak Sharmaya Tha !