New Fatima Blog

This website is about khwab ki tabeer by ibn e siren, Ibn e kathir, khwab nama e yousafi in urdu , Quran, Hadith, Dramas in Urdu and english, Poetry, Naat, and cooking.

a ads

Sunday, December 6, 2020

Taaluq is tarha tora nhi kartay

تعلق اِس طرح توڑا نہیں کرتے


كے پِھر سے جوڑنا دشوار ہو جائے


حیات اک زہر میں ڈوبی ہوئے تلوار ہو جائے


" محبت اِس طرح چھوڑا نہیں کرتے "


خفا ہونے  کی رسمیں ہیں بگرنے کے طریقے ہیں


رواج رسم ترک دوستی پر سو کتابیں ہیں


رواداری کا ہرگز رستہ چھوڑا نہیں کرتے


" تعلق اِس طرح توڑا کرتے "

کبھی بلبل گلوں کی خاموشی سے روٹھ جاتی ہے


پر اگلے سال سب کچھ بھول کر پِھر لوٹ آتی ہے


سبھی بھنوروں  کو گل حر جا ئی کہتے ہیں


مگر تھوڑی سی ضد کے بعد بندھن کھول دیتے ہیں


کبھی پودوں  سے پانی دور ہو جائے


تو ہمسایہ درختوں کے ہاتھ پیغا مات جاتے ہیں


" محبت میں سبھی اک دوسرے کو آزماتے ہیں "


مگر ایسا نہیں کرتے كے ہر امید ہر امکان مٹ جائے


کہاں تک کھینچنی ہے ڈ ور یہ اندازہ رکھتے ہیں


" ہمیشہ چار دیواری میں اک دروازہ رکھتے ہیں "


جدائی مستقل ہو جائے تو یہ زندگی زندان ہو جائے 


اگر خوشبو ہواؤں سے مراسم منقطع ا کر لے


" تو خود میں ڈوب کر بے جان ہو جائے "


سنو جینے سے منہ موڑا نہیں کرتے


محبت اِس طرح چھوڑا نہیں کرتے


 Taaluq is tarha tora nahi kertay

 Ke phir say jorna dushwaar ho jaye


 Hayaat ik zehr main doobi howe talwaar ho jaye

"MOHABBAT is tarha chora nahi kertay"

Khafa honey ki rasmain hain 
Bigarnay k tareekay hain

 Rawaj-o-rasm tark-e-dosti per so kitaabain hain

 Rawadaari ka hargiz rasta chora nahi kertay

"Taaluq is tarha tora kertay"

Kabhi bulbul guloon ki khamoshi say rooth jati hay

Per aglay saal sab kuch bhool ker phir lot aati hay

 Sabhi bhanwroon ko gul harjaai kehtay hain

 Magar thori si zidd k baad bandhan khol detay hain

 Kabhi podoon say pani door ho jaye

 To hamsaya darakhtoon k haath paighamat jatay hain

"MOHABBAT main sabhi ik dosray ko aazmaatay hain"

Mager aisa nahi kertay

 Ke har umeed har imkaan mit jaye

 Kahan tak khainchni hay dor ye andaza rakhtay hain

"Hamesha chaar deewari main ik darwaza rakhtay hain"

Judai mustaqil ho jaye

 To ye zindagi zindaan ho jaye.

Ager khushboo hawaoon say marasim munqataa ker lay

"To khud main doob ker be-jaan ho jaye"

suno Jeenay say moun mora nahi kertay

 MOHABBAT is tarha chora nahi kertay

No comments:

Post a Comment