Tu Hi Tu Hai Jahan Jahan Jaen

تُو ہی تُو ہے جہاں جہاں جائیں
ہم ترے بعد اب کہاں جائیں
راکھ ہو کر بھی یہ خیال رہا
بن کے تیری طرف دھواں جائیں
تم مکیں ہو اٹھو گے چل دو گے
کبھی سوچا کہاں مکاں جائیں
جب محبت کو عقل آ جائے
پھر یہ کچے گھڑے کہاں جائیں
تیز ناخن ہیں تیری یادوں کے
کیا بھریں زخم، کیا نشاں جائیں
خامشی جب جوابِ دستک ہو
صاف مطلب ہے مہرباں جائیں
جب دکاں ہی بڑھا گیا ابرک
کیا کسی دوسری دکاں جائیں

۔۔۔۔اتباف ابرک 

Post a Comment

0 Comments