Meri Ankhon mein janaza hai koe

                                      Aur Ashkon mein duaa hai meray dost


Meri Ankhon mein janaza hai koe,Sad Poetry


                                                                                                  کر میرے زخم پہ آئی . .

کر میرے زخم پہ اک بار نظر
تیری آنکھوں میں شفاء ہے میرے دوست

موت بھی جس سے رہا کر نا سکے
زندگی ایسی سزا ہے میرے دوست

کیا بتاؤں تیری خاموشی سے
کیسا طوفان اُٹھا ہے میرے دوست

میری آنکھوں میں جنازہ ہے کوئی
اور اشکوں میں دعا ہے میرے دوست

میرے قطبے پہ ادا کر دینا
ایک بوسہ جو قضا ہے میرے دوست

یہ میرے زخمی تبسم کا خمار
تیرے لہجے کی عطا ہے میرے دوست

تیرے ہونے کا گمان رہتا ہے
ہجر بھی کیسا نشہ ہے میرے دوست

میں تجھے بھولنا چاہوں بھی تو کیوں
تو میرا سمت رواں ہے میرے دوست

تو بھی اک روز چلا جائے گا
عمر بھر کون رکا ہے میرے دوست

میں نے چُوما ہے تیرے ماتھے کو
تو یہ سمجھا ہے كے ہوا ہے میرے دوست

آج رونے کا مزہ آئے گا
آج تو کھل كے ہنسا ہے میرے دوست

آسمان جیسے زمین سے مل جائے
تو ہمیں ایسا ملا ہے میرے دوست

عشق ہی میرے تعاقب میں نہیں
اور بھی ایک بلا ہے میرے دوست

ٹیس اٹھائی ہے کہیں اندر سے
زخم کچھ گہرا لگا ہے میرے دوست

چا ند نکلا ہے نا تو آیا ہے
رات نے شکوہ کیا ہے میرے دوست

کم نہیں ہو رہی بیچینی میری
میں نے سگریٹ بھی پیا ہے میرے دوست

پِھر تیری یاد کا ناخن آ کر
میرے سینے سے لگا ہے میرے دوست

پِھر ہرے ہو گئے جلے دِل كے
پِھر تجھے دیکھ لیا ہے میرے دوست