لگتا نہیں ہے دل مرا اجڑے دیار میں
کس کی بنی ہے عالم ناپائیدار میں

ان حسرتوں سے کہہ دو کہیں اور جا بسیں
اتنی جگہ کہاں ہے دل داغدار میں

کانٹوں کو مت نکال چمن سے او باغباں
یہ بھی گلوں کے ساتھ پلے ہیں بہار میں

بلبل کو باغباں سے نہ صیاد سے گلہ
قسمت میں قید لکھی تھی فصل بہار میں

کتنا ہے بد نصیب ظفرؔ دفن کے لیے
دو گز زمین بھی نہ ملی کوئے یار میں!

بہادر شاہ ظفر

Lagta nahein hai dil mera ujray dyar mein,bahadur shah zafar,urdu poetry,Sad Poetry,


lagta nahi hai dil mra ujre deyaar mein
kis ki bani hai aalam napaidaar mein

un hasratoon se keh do kahin aur ja baseen
itni jagah kahan hai dil daghdar mein

kaanton ko mat nikaal chaman se o باغباں
yeh bhi gulon ke sath pallay hain bahhar mein

bulbul ko باغباں se nah sayyad se gilah
qismat mein qaid likhi thi fasal bahhar mein

kitna hai bad naseeb ظفرؔ dafan ke liye
do gaz zameen bhi nah mili koye yaar mein !

bahadur Shah Zafar