New Fatima Blog

This website is about khwab ki tabeer by ibn e siren, Ibn e kathir, khwab nama e yousafi in urdu , Quran, Hadith, Dramas in Urdu and english, Poetry, Naat, and cooking.

a ads

Saturday, November 7, 2020

Neeli Raat Kay aakhri Lamhay Guzar Rahe Hain

                                                    

نیلی رات کے آخری لمحے گزر رہے ہیں
میں کمرے کو، کمرا مجھ کو دیکھ رہا ہے
آنکھیں بند ہیں
اور دیئے کی لَو روشن ہے
دایاں ہاتھ مرے سینے پر دھرا ہوا ہے
نیند کو ہلکا سا ڈانٹا تھا
بھاگ گئی ہے
میں نے خود کو جیسے حکم سنا رکھا ہے
جب میں اُس کے دھیان میں جاؤں
نیند تو کیا ہے
موت بھی ہو تو پوچھ کے آئے 
مری عبادت کا لمحہ ہے
اور میں تم کو سوچ رہا ہوں
جانے کیسی آنکھیں ہوں گی
دن بھر میں جو تم کو سامنے دیکھتی ہوں گی
جن کی بھی ہوں
وہ آنکھیں خوش قسمت ہیں
میں تو تم کو دیکھے بنا ہی دیکھتا ہوں
میری آنکھیں کیسی ہیں؟
نہیں پتہ نا 
یہ آنکھیں مومن آنکھیں ہیں
جو بن دیکھے مانتی ہیں
بس اتنا ہی دیکھتی ہیں تم جتنا چاہو
نیند نے پھر سے تنگ کیا ہے 
اور اب دھیان تمھارے کمرے کی جانب یے
دروازے پر رک کر تم کو دیکھ رہا ہوں
کتنی گہری نیند میں ہو تم
اور تمھارا بستر پورا جاگ رہا ہے
اور گلابی ہونٹوں پر جو اک مسکان سی سجی ہوئی ہے
 خواب میں کس کو دیکھ رہی ہو ؟
ہو گا کوئی ! میں تو نہیں ہوں
میں ہوتا تو نیند میں بھی تم غصے ہوتیں
اور پھر کہتیں
خوابوں میں بھی آ دھمکے ہو ؟
نکلو میرے خواب سے باہر
اور دوبارہ آنے کی ہمت مت کرنا 

تم کو شاید سردی سی محسوس ہوئی ہے
اور کمرے میں عُود کی خوشبو پھیل گئی ہے
آگے بڑھ کر چادر ٹھیک کروں گا تو تم اٹھ جاؤ گی
اور اس سے پہلے تم جاگو
میں نے تمھارے کمرے کی خوشبو میں پورا سانس لیا ہے
اور آنکھوں سے ماتھا چوم کے خود کو واپس لے آیا ہوں
نیلی شب اک روشن صبح میں بدل چکی ہے
اور تمھاری خوشبو اب میرے اندر ہے
کمرا میری بند آنکھوں کو دیکھ رہا ہے
میں سویا ہوں
اور دئیے کی لَو روشن ہے


Neeli Raat Kay aakhri Lamhay Guzar Rahe Hain
Main Kamre Ko,Kamra Mujh Ko Dekh Raha Hay
Ankhain Band Hain
Aur Diye Ki Lou Roshan Hay
Daayan Hath Mere seenay Par Dhara Hua Hay
Neend ko Halka Sa Daanta Tha
Bhag Gayi Hay
Main Nay Khud Ko Jese Hukm Suna Rakha Hay
Jab Main Us kay Dhayan Mien Jaaon
Neend To Kya Hay
Mout Bhi Ho To Poch Kay Aaye !
Meri Ebadat Ka Lamha Hay
Aur Main Tum Ko Soch Raha Hon
Janay Kesi Ankhain Hon gi
Din Bhar Mien Jo Tum Ko Samne Dekhti Hon Gi
Jin ki bhi Hon
Wo Ankhain Khushqismat Hain
Main To Tum Ko Dekhe Bina He Dekhta Hon
Meri Ankhain Kesi Hain ?
Nahin Pata Na ?
Yeh Ankhain Momin Ankhain Hain
Jo Bin Dekhe Manti Hain
Bus Utna Hé Dekhti Hain Tum jitna Chaho
Neend Nay Phir Say Tang Kia Hay
Aur Ab Dhayan Tumhare Kamre Ki Janib Hay
Darwaze Par Ruk Kar Tum Ko Dekh Raha Hon
Kitni Gehri Neend Mien Ho Tum
Aur Tumhara Bistar Pora Jaag Raha Hay !
Aur Gulabi Honton Par Jo Ek Muskan Si Saji Hui Hay
( Khawb Mien Kis Ko Dekh Rahi Ho ?
Ho ga Koi !
Main to Nahi Hon
Main Hota to Neend Mien Bhi Tum Ghusse Hotin
Aur Phir Kehtin
Khawbon Mien Bhi Aa Dhamke Ho?
Niklo Mere Khawb Say Bahar!
Aur Dobara Aanay Ki Himmat Mat Karna ! )

Tum Ko Shayad Sardi Si Mehsos Hui Hay
Aur Kamre Mien Ettr Ki Khushbu Phail Gayi Hay
Aagay Barh Kar Chadar Theak Karon Ga to Tum uth Jao gi
Aur Is Say Pehle Tum Jago
Main Nay Tumhare Kamre Ki Khushbu Mien Pora Sans lia Hay
Aur aankhon Say Matha Chom Ko Khud Ko Wapis Lay Aaya Hon !
Neeli Shab Ab Ek Roshan Subh Mien Badal Chuki Hay
Aur Tumhari Khushbu Ab Mere Andar Hay
Kamra Meri Band Aankhon Ko Dekh Raha hay !
Main Soya Hon
Aur Diye Ki Lou Roshan hay !

No comments:

Post a Comment